نام کتاب : المنہج المفید فی علم التوحید (عربی)

مصنف : الشیخ افتخار احمد تاج الدین الازہری حفظہ اللہ

تعداد صفحات : 128

قیمت : درج نہیں

ناشر : مکتبہ بیت السلام (ریاض۔ لاہور)

ملنے کا پتہ : ملک بھر کے اہم سلفی مکتبہ جات پہ دستیاب ہے۔

عقیدئہ توحید سے مراد اللہ رب العزت کو ربوبیت ،  الوہیت اور اسماء وصفات میں یکتا وتنہا ماننا اور ان سہ اقسام میں سے کسی میں بھی کسی کو بھی اس کا شریک وسہیم نا ماننا ہے۔ علم توحید سے اللہ رب العزت کی صحیح معرفت حاصل ہوتی ہے۔باری تعالیٰ کی صحیح معرفت سے ہی انسان کے اندر خشیت الٰہی کا جذبہ پیدا ہوتاہے۔ علم توحید سے دوری انسان میں سرکشی جنم لیتی ہے۔ جس کی بناء پر وہ اپنے خالق ومالک سے دور ہوتا جاتاہے۔

توحید رب العالمین اور اس سے متعلقہ مباحث سے آگاہی کے لیے اہل علم نے مختصر،متوسط اور مطول ہر سہ اقسام کی علمی وتحقیقی تصنیفات سپرد قلم کی ہیں۔ تقبل اللہ جھودھم وبارک فیھا

اسی سلسلہ مبارکہ میں تازہ اضافہ فضیلۃ الشیخ افتخار احمد تاج الدین الازہری (شیخ الحدیث جامعہ بحر العلوم السلفیہ میر پور خاص سندھ) کی زیر تبصرہ کتاب ہے۔باری تعالیٰ نے حضرۃ الشیخ کو فن تدریس میں مہارت کے ساتھ ساتھ سیّال قلم سے نوازا ہے جیسا کہ ان کی مطبوعہ تصانیف پر بات مترشح ہوتی ہے۔

زیر تبصرہ کتاب مختصر ہونے کے با وجود انتہائی مفید ونافع ہے ۔ اس میں فاضل مصنف نے علم توحید کے مباحث کو عقلی ونقلی دلائل کی روشنی میں قلمبند کیا ہے، اس کتاب کے تین ابواب ہیں۔

پہلا باب : الالوھیات سے متعلق ہے جس میں علم توحید کی لغوی واصطلاحی تعریفات،موضوع ،ثمرات اور فوائد کے ساتھ ساتھ توحید کی تین معروف اقسام توحید ربوبیت، الوہیت اور توحید اسماء وصفات کا مدلل تذکرہ ہے۔

توحید اسماء وصفات میں صفت قدرت،صفت علم، صفت حب وغیرہ تقریباً باری تعالیٰ کی 19 صفات جلیلہ کا مجمل تعارف اور اس میں سلف صالحین کے مبنی برحق موقف  کو اجاگر کیا ہے۔

باب دوم ’’النبوات‘‘ ہے جس میں انبیاء ورسل علیہم السلام سے متعلق مفید طلب مباحث کو اختصار کے ساتھ جمع کیاہے، نبی ورسول کی لغوی واصطلاحی تعریفات، انبیاء کرام علیہم السلام کی تعداد، ان کے فرائض منصبی،معجزاتِ انبیاء، معجزہ اور کرامت میں فرق اور نبی مکرم کی نبوت ورسالت کے خصائص دوسرے باب کی اہم مباحث میں شامل ہیں۔

تیسرے باب کا موضوع ’’السمعیات‘‘ کے نام سے موسوم ہے جس کوعرف عام میں ایمان بالغیب بھی کہا جاتاہے اس باب میں حشر،حوض کوثر،احوال قبر، میزان، شفاعت، جنت وجہنم سمیت تقریباً 16 ایسے امور کوسپرد قلم کیا ہے جن کا تعلق ایمان بالغیب کے ساتھ ہے۔

فاضل مؤلف نے ہر بحث کی سب سے پہلے لغوی واصطلاحی تعریف ذکر کی ہے پھر متعلقہ بحث سے متعلق قرآنی دلائل ذکر کیے ہیں اس کے بعد اسی مسئلہ کی مزید وضاحت فرامین نبویہ سے کی ہے۔ اکثر مقامات پہ نقلی دلائل کے بعد عقلی ومنطقی استدلالات بھی زیر بحث لائے ہیں۔

یقیناً یہ کتاب علم توحید کی تفہیم وترویج کے لیے اہم کردار ادا کرے گی نیز دینی مدارس کے ابتدائی درجوں میں اس کی تدریس سے طلبہ کرام کوعربی زبان سے واقفیت کے ساتھ علم توحید سے متعلق بنیادی معلومات بھی حاصل ہوں گی۔إن شاء اللہ

باری تعالیٰ سے دعا ہے کہ وہ ہمیں عقیدہ توحید میں منہج سلف صالحین پہ کاربند رکھے اور ’’عقیدئہ توحید‘‘ میں اس ’’منہج‘‘ کو ہمارے لیے مفید بنائے۔

آخر میں دعا ہے کہ باری تعالیٰ اپنی توحید کےدرس کو عام کرنے کی غرض سے اس کتاب کو منصہ شہود پہ لانے والے مصنف،ناشر، تقسیم کنندگان کو اپنی مرضیات سے نوازے۔ آمین

۔۔۔۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے